اومیکرون بحران،امریکہ میں بڑی تعداد میں بچے ہسپتالوں میں داخل

نیویارک //امریکا میں بچوں کے اومیکرون ویرینٹ سے تیزی سے متاثر ہونے کی وجہ سے ہسپتالوں میں داخلے کی تعداد ریکارڈ سطح پر جا پہنچی۔ اگرچہ ماہرین فکر مند ہیں اور بچوں میں ویکسینیشن کو تیز کرنے کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں تاہم ابتدائی اشارے بتاتے ہیں کہ کورونا کی اس نئی قسم سے شدید بیمار ہونے کی شرح درحقیقت کم ہے اور اس تیزی سے اضافے کی وجہ اس کا انتہائی متعدی ہونا ہے۔خام اعداد و شمار اتفاقی انفیکشن سے بھی متاثر ہوسکتے ہیں جو ہسپتال میں داخلے کی بنیادی وجہ نہیں ہیں۔امریکن اکیڈمی آف پیڈیاٹرکس کے مطابق، 23 دسمبر کو ختم ہونے والے ہفتے میں تقریباً ایک لاکھ 99 ہزار بچے کووِڈ 19 سے متاثر ہوئے جبکہ مہینے کے اوائل کے اعداد و شمار میں 50 فیصد اضافہ ہوا۔اس کے علاوہ 28 دسمبر کو ختم ہونے والے ہفتے میں 0-17 سال کی عمر کے لوگوں کے لیے کووِڈ ہسپتال میں داخل ہونے کی اوسط تعداد 378 تھی، جو اس سے پہلے والے ہفتے کے مقابلے میں 66.1 فیصد اضافہ اور اب تک کی سب سے زیادہ تعداد ہے جس نے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ڈیلٹا لہر کے دوران یکم ستمبر کو دیکھے گئے عروج کو پیچھے چھوڑ دیا۔بچوں کے علاوہ جس عمر کے گروپ کے ہسپتال میں داخل ہونے کی شرح زیادہ ہے وہ 18 سے 29 سال کی عمر کے لوگ ہیں۔ تاہم بڑی عمر کے افراد میں اس ویرینٹ سے شدید بیمار ہونے کی شرح خاصی کم ہے۔عالمی وبا کے آغاز سے لے کر امریکا میں مجموعی طور پر کووڈ سے 8 لاکھ 20 ہزار اموات ہوچکی ہیں جن میں 0-18 سال کی عمر کے لوگوں کی 803 اموات ہیں۔ہانگ کانگ کی لیبارٹری میں بافتوں کے نمونوں کی ٹیسٹنگ کی بنیاد پر دیکھا گیا کہ ڈیلٹا کے مقابلے میں اومیکرون حلق، پھیپھڑوں میں جانے والی نالیوں میں 70 گنا زیادہ تیزی سے بدلتا ہے، جس سے پوری آبادی میں اس کے انتہائی پھیلاؤ کی وضاحت میں مدد مل سکتی ہے۔امریکا میں بچوں کے سب سے بڑے ہسپتال ٹیکساس چلڈرن ہسپتال کے پیتھالوجسٹ اور امیونولوجسٹ جم ورسالووک نے اے ایف پی کو بتایا کہ ‘میرے خیال میں اس وقت یہ نمبروں کا کھیل ہے۔’انہوں نے کہا کہ جو کچھ ڈیٹا ہم نے اب تک اکٹھا کیا اس کی بنیاد پر اومیکرون زیادہ شدید انفیکشن کا باعث نہیں بن رہا ہے، بلکہ بہت سے بچوں کو متاثر کر رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں